spot_img

ذات صلة

جمع

شیخ رشید کو لاپتا ہونے کے دوران چپیڑیں ماری گئیں: لطیف کھوسہ

شیخ رشید پر تشدد کا الزام: سینئر قانون دان...

وفاقی حکومت نے گیس کی قیمتوں میں اضافے کی منظوری دے دی

وفاقی حکومت نے گیس کی قیمتوں میں اضافے کی...

خیبر پختونخوا میں مالی بحران: سرکاری ملازمین کی تنخواہوں سے 25 فیصد کٹوتی کا فیصلہ

خیبر پختونخوا میں مالی بحران شدت اختیار کرگیا ہے،...

سلطان راہی کو کس نے اور کیوں مارا؟ پاکستان فلم انڈسٹری کے لیجنڈ کی دردناک کہانی

سلطان راہی، پاکستانی فلم انڈسٹری کے ایک عظیم اداکار تھے جنہوں نے اپنی اداکاری کے جوہر سے لوگوں کے دلوں میں گھر کر لیا تھا۔ وہ اپنے کرداروں کے لیے بے حد جانے جاتے تھے اور ہمیشہ اپنے کرداروں میں ڈوب کر اداکاری کرتے تھے۔ سلطان راہی نے اپنے کریئر میں 700 سے زیادہ فلموں میں کام کیا اور ہمیشہ اپنے مداحوں کی محبت اور داد حاصل کی۔

لیکن 9 جنوری 1996 کو، سلطان راہی کو لاہور میں قتل کر دیا گیا۔ اس قتل نے پاکستانی فلم انڈسٹری اور پورے ملک کو صدمہ پہنچایا۔

سلطان راہی کے قتل کے پیچھے کئی نظریات ہیں، لیکن کوئی بھی حتمی جواب نہیں ہے۔ کچھ لوگوں کا خیال ہے کہ ان کا قتل ان کی بڑھتی ہوئی مقبولیت کی وجہ سے کیا گیا تھا، جبکہ دوسروں کا خیال ہے کہ یہ ایک ذاتی دشمنی کا نتیجہ تھا۔

سلطان راہی کے قتل کے معاملے کی تحقیقات کی گئیں، لیکن کوئی بھی مجرم نہیں پکڑا جا سکا۔ یہ معاملہ اب بھی ایک معمہ ہے اور سلطان راہی کے مداحوں کے لیے ایک بڑا المیہ ہے۔

سلطان راہی کے قتل کی ممکنہ وجوہات

سلطان راہی کے قتل کی ممکنہ وجوہات میں سے کچھ یہ ہیں:

  • مقبولیت: سلطان راہی پاکستان کی سب سے زیادہ کامیاب فلمی اداکاروں میں سے ایک تھے۔ ان کی بڑھتی ہوئی مقبولیت سے کچھ لوگوں کو خطرہ لاحق ہو سکتا تھا، جو ان کے قتل کی وجہ بن سکتا تھا۔
  • ذاتی دشمنی: سلطان راہی ایک متنازعہ شخصیت تھے۔ ان کی ذاتی زندگی پر کئی بار سوالات اٹھائے گئے تھے۔ یہ ممکن ہے کہ کسی نے ان کے خلاف ذاتی دشمنی کی وجہ سے ان کا قتل کیا ہو۔
  • مالی تنازعہ: سلطان راہی کی فلموں کی کامیابی نے انہیں ایک امیر آدمی بنا دیا تھا۔ یہ ممکن ہے کہ کسی نے ان کے پیسے پر قبضہ کرنے کے لیے ان کا قتل کیا ہو۔

سلطان راہی کے قتل کی تحقیقات

سلطان راہی کے قتل کی تحقیقات لاہور پولیس نے کیں، لیکن کوئی بھی مجرم نہیں پکڑا جا سکا۔ تحقیقات میں یہ بات سامنے آئی کہ سلطان راہی کو ان کے گھر کے قریب ایک گولی مار کر ہلاک کیا گیا تھا۔ ان پر دو گولیاں چلائی گئی تھیں، جن میں سے ایک ان کے سر میں لگی تھی۔

پولیس نے کئی مشتبہ افراد کو حراست میں لیا، لیکن ان کے خلاف کوئی ثبوت نہیں مل سکے۔ تحقیقات کا معاملہ اب بھی ایک معمہ ہے اور سلطان راہی کے مداحوں کے لیے ایک بڑا المیہ ہے۔

سلطان راہی کا یادگار

سلطان راہی کی موت پاکستانی فلم انڈسٹری اور پورے ملک کے لیے ایک بڑا نقصان تھا۔ وہ ایک عظیم اداکار تھے جنہوں نے ہمیشہ اپنے مداحوں کے دلوں میں گھر کر لیا تھا۔

سلطان راہی کو پاکستان کی فلم انڈسٹری میں ان کی خدمات کے لیے کئی اعزازات سے نوازا گیا۔ ان کو 1986 میں حکومت پاکستان کی طرف سے "ستارہ امتیاز” کا اعزاز دیا گیا تھا۔

سلطان راہی کی یادیں آج بھی ان کے مداحوں کے دلوں میں زندہ ہیں۔ وہ ایک عظیم اداکار تھے جنہوں نے ہمیشہ اپنے کرداروں میں ڈوب کر اداکاری کی اور ہمیشہ اپنے مداحوں کی محبت اور داد حاصل کی۔

spot_imgspot_img