spot_img

ذات صلة

جمع

علیم خان کا جنرل فیض حمید پر الزام، جہانگیر ترین نے غلام سرور خان کا خیرمقدم کیا

ٹیکسلا میں جمعرات کو استحکام پاکستان پارٹی کا جلسہ...

تحریک انصاف کی تین سالہ حکومت کی ہوشربا کرپشن

پاکستان تحریک انصاف کی تین سالہ حکومت کے دوران...

میانوالی میں دہشتگرد حملے میں استعمال ہونے والے اسلحے کی تفصیلات سامنے آ گئیں

میانوالی میں 4 نومبر کو پاکستان ائیرفورس کے ٹریننگ...

اسحاق ڈار نے جنرل باجوہ سے اختلافات کی وجہ مالی مسائل بتائی

سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے سابق آرمی چیف...

سائفر کیس: ایف آئی اے نے عمران اور شاہ محمود کو قصور وار قرار دیا

اسلام آباد: ایف آئی اے نے سائفر کیس میں سابق وزیراعظم عمران خان اور سابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کو قصور وار قرار دیتے ہوئے چالان عدالت میں جمع کرادیا۔

چالان میں کہا گیا ہے کہ عمران خان نے سائفر کو اپنے پاس رکھا اور اسٹیٹ سیکریٹ کا غلط استعمال کیا۔ شاہ محمود قریشی نے بھی عمران خان کی ہدایات پر سائفر کو افشا کیا۔

چالان میں اعظم خان کو مضبوط گواہ قرار دیا گیا ہے۔ اعظم خان سابق وزیراعظم عمران خان کے پرنسپل سیکرٹری تھے۔

چالان میں کہا گیا ہے کہ عمران خان نے 2021 میں امریکا سے ضمانت حاصل کرنے کے لیے سائفر کو استعمال کیا۔ عمران خان نے امریکا پر دباؤ ڈالا کہ وہ پاکستانی حکومت کو گرانے میں مدد کریں۔

چالان میں کہا گیا ہے کہ شاہ محمود قریشی نے بھی عمران خان کی ہدایات پر سائفر کو افشا کیا۔ شاہ محمود قریشی نے سائفر کو ایک ٹی وی چینل کو دیا۔

چالان میں عمران خان اور شاہ محمود قریشی دونوں کے خلاف 27 دفعات کا اندراج کیا گیا ہے۔ ان میں آفیشل سیکریٹ ایکٹ کی دفعات بھی شامل ہیں۔

چالان میں کہا گیا ہے کہ عمران خان اور شاہ محمود قریشی دونوں کو سزا سنائی جائے گی۔

اعظم خان کا بیان

اعظم خان نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ عمران خان نے انہیں سائفر کو اپنے پاس رکھنے کی ہدایات دی تھیں۔ عمران خان نے کہا تھا کہ سائفر کو کسی کو نہیں دکھانا ہے۔

اعظم خان نے کہا ہے کہ شاہ محمود قریشی نے عمران خان کی ہدایات پر سائفر کو افشا کیا۔ شاہ محمود قریشی نے انہیں کہا تھا کہ عمران خان نے سائفر کو افشا کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

عمران خان کا ردعمل

عمران خان نے سائفر کیس کو سیاسی سازش قرار دیا ہے۔ عمران خان نے کہا ہے کہ یہ چالان ان کی حکومت کو گرانے کے لیے بنایا گیا ہے۔

عمران خان نے کہا ہے کہ وہ اس چالان کا مقابلہ کریں گے۔

سائفر کیس کیا ہے؟

سائفر کیس ایک سیاسی تنازعہ ہے جو 2021 میں شروع ہوا تھا۔ اس تنازعہ میں ایک سائفر کا ذکر ہے جو ایک امریکی سفارت کار نے پاکستانی حکومت کو لکھا تھا۔ اس سائفر میں عمران خان کی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا گیا تھا۔

عمران خان نے اس سائفر کو ایک سیاسی سازش قرار دیا تھا۔ عمران خان نے کہا تھا کہ یہ سائفر ان کی حکومت کو گرانے کے لیے بنایا گیا ہے۔

چالان میں کہا گیا ہے کہ عمران خان نے اس سائفر کو اپنے سیاسی مقاصد کے لیے استعمال کیا۔ عمران خان نے اس سائفر کو استعمال کرتے ہوئے امریکا پر دباؤ ڈالا تھا۔

چالان میں کہا گیا ہے کہ شاہ محمود قریشی نے بھی اس سائفر کو عمران خان کی ہدایات پر افشا کیا۔ شاہ محمود قریشی نے اس سائفر کو ایک ٹی وی چینل کو دیا۔

چالان میں عمران خان اور شاہ محمود قریشی دونوں کے خلاف 27 دفعات کا اندراج کیا گیا ہے۔ ان میں آفیشل سیکریٹ ایکٹ کی دفعات بھی شامل ہیں۔

چالان میں کہا گیا ہے کہ عمران خان اور شاہ محمود قریشی دونوں کو سزا سنائی جائے گی۔

spot_imgspot_img